نواز شریف کی واپسی ہوگی

نواز شریف کی واپسی ہوگی کہ نہیں بڑی خبر سامنے آگئ

%Pak Exams%نواز شریف کی واپسی ہوگی

مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف کی لندن سے واپسی کی افواہیں اس وقت اڑنا شروع ہو گئی ہیں جب انہوں نے حال ہی میں اپنی پارٹی کے ارکان سے خطاب کے اختتام پر کہا تھا کہ وہ جلد ان سے ملیں گے۔

یہ ایک بڑھتے ہوئے تاثر کے تناظر میں سامنے آیا ہے – جسے خود مسلم لیگ (ن) کے مختلف رہنماؤں نے خوشی سے اڑا دیا ہے – کہ ایک معاہدہ قریب ہے اور پی ٹی آئی حکومت کے دن گنے جا رہے ہیں۔
ابھی تک اس بات کا کوئی ٹھوس ثبوت سامنے نہیں آیا کہ ایسا ہو سکتا ہے اور نہ ہی کوئی اس بات کی تصدیق کرنے کے لیے سامنے آیا ہے کہ حکومت کو ہٹانے کے لیے کوئی نیا اقدام کیا جا رہا ہے، لیکن حقیقت یہ ہے کہ قومی اسمبلی کے سابق چیئرمین سردار ایاز صادق جیسے کئی ذمہ دار لوگ ہیں۔

آنے والی تبدیلی کے بارے میں بڑے پیمانے پر اشارے چھوڑنا جس کا مطلب ہے کہ بند دروازوں کے پیچھے کچھ ہو رہا ہے۔ حکومتی ترجمان ایسے دعوؤں کو مسترد کر رہے ہیں اور نواز شریف کو واپس آنے اور جیل کا سامنا کرنے کا چیلنج دے رہے ہیں۔
تاہم، یہ واضح ہے کہ سابق وزیراعظم کی واپسی، جب بھی ہوگی، زیادہ سے زیادہ سیاسی اثرات کے لیے بروقت ہوگی۔ وہ اور ان کے حامی اس بات سے بخوبی واقف ہیں کہ جب تک انہیں قانونی چارہ جوئی نہیں دی جاتی، انہیں اپنی مدت جیل میں ہی گزارنی پڑے گی۔

ان کا مستقل مطالبہ آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کا رہا ہے اور اس سے کم نہیں۔جب کہ حزب اختلاف کی صفوں میں سے بہت سے لوگ اب یہ محسوس کر رہے ہیں کہ سنگین سیاسی اور معاشی صورتحال سے نکلنے کا واحد راستہ پارٹیوں کے لیے نیا مینڈیٹ حاصل کرنا ہے، حکومت کا خیال ہے کہ اپنی پانچ سالہ مدت پوری کرنا ہی اس کے مفادات کی تکمیل ہے۔
اس سلسلے میں جناب شریف کی اخلاقی ذمہ داری ہے کہ وہ علاج کے لیے لندن جاتے ہوئے وعدے کے مطابق پاکستان واپس آئیں۔ بظاہر وہ اچھی صحت میں ہیں، جس کا مطلب ہے کہ انہیں عدالتوں سے کیے گئے وعدوں کو پورا کرنے سے کوئی نہیں روک سکتا۔

اس لیے ان کی واپسی کی حالیہ گونج ایک خوش آئند علامت ہے۔
تاہم حکومت کا ردعمل اس کے برعکس نظر آتا ہے۔ اسلام آباد میں تبدیلی لانے والی ڈیل کی کوئی بھی بات پی ٹی آئی کی قیادت میں یقیناً خوف و ہراس پیدا کر سکتی ہے۔

اگر حکومت آئی ایم ایف کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے پارلیمنٹ سے منی بل پاس کروا سکتی ہے تو معیشت کی کمزور حالت اور مہنگائی کی شرح میں اضافہ ہو گا۔اس سے مہنگائی کا ایک اور دور شروع ہو گا اور شہریوں پر مزید بوجھ پڑے گا۔ پی ٹی آئی کے ارکان پارلیمنٹ اس بات سے بخوبی واقف ہیں

کہ اس سے ان کے ووٹرز پر کیا منفی اثرات مرتب ہوں گے اور جو بھی سیاسی سرمایہ انہوں نے چھوڑا ہے اسے ختم کر رہے ہیں۔ایک ایسے وقت میں جب حکومت ہر قسم کے جھٹکوں کی لپیٹ میں ہے،

جناب شریف کی واپسی کی افواہیں پی ٹی آئی میں لوگوں کے لیے کافی تشویش کا باعث ہیں۔ اس لیے اگلے چند ہفتے اہم ہیں۔ اگر نواز شریف کی واپسی واضح ہو جاتی ہے تو اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ حکومت کے خلاف ایک نئی چال چل رہی ہے اور سیاسی کارڈ ردوبدل کے لیے تیار ہیں۔
نواز شریف کی واپسی ہوگی

Important Links

NEW JOBS 2022 AUSAF NEWS GOVERNMENT JOBS 2022

New Government Jobs in Pakistan Army Unit 2022

               New Election Commission of Pakistan jobs 2022PIC New Jobs 2022PIC New Jobs 2022

Latest Jobs

 

Leave a Comment

Your email address will not be published.

Scroll to Top